شريعت كے عمومى مقاصد (1)‏

  • 24 جولائی 2018
شريعت كے عمومى مقاصد (1)‏

             منفعت عامہ كو منفعت خاصہ پر ترجيح دينا شريعتِ ا سلامى كا ايك  بنيادى اصول ہے،  ذہن ميں رہے كہ شريعتِ اسلامى كى بنيادى غرض وغايت اور حقيقى مقصد دنياوى واخروى منافع  دونوں كا حصول ہے-

            قرآن كريم اور سنتِ نبوىؐ ميں تشريعى احكام كى تحقيق سے واضح ہوتا ہے كہ ان سب كا مقصد يہى ہے، كيونكہ شريعت ميں كوئى مامور وماذون، جائز اور مباح فعل ايسا نہيں جو مفيد ونفع بخش نہ ہو اور كوئى ممنوع فعل ايسا نہيں جو نقصان ده نہ ہو-

           مگر حصولِ منفعت كے لحاظ سے مامور اور ممنوع افعال درجہ ميں برابر نہيں ہيں ، بلكہ كچھ اہم بنيادى منافع ومصالح ايسے ہيں جن كے حصول كے بغير  لوگوں كى زندگى خراب ہوجاتى ہے اور كچھ منافع ضرورى ہيں مگر پہلے درجہ سے كم ہيں، اور ان ميں سے كچھ منافع ايسے ہيں جو زندگى (كے اضافى لوازمات) كى تحسين وتزئين اور آرائش كے لئے ہوتے ہيں- فقہاء نے واضح طور پر بيان كيا ہے كہ لوگوں كى يہ منفعتيں اور ضرورتيں، تين امور پر مشتمل ہيں اور وه يہ ہيں: اہم ترين بنيادى امور، ضرورى اشياء، اور آرائشى وزيباشى چيزيں،  شريعت ا سلامى  كى حقيقى غرض وغايت  ان تينوں مقاصد كى حفاظت ہے، كبهى ان كا حصول اور كبهى ان كى حفاظت اور دفاع ہے، اسى اعتبار سے علماء نے مقاصدِ شريعت كى تين قسميں بيان كى ہيں:

  • اہم بنيادى مقاصد
  • ضرورى مقاصد
  • تنزئينى (تكميلى) مقاصد
  1. اہم بنيادي مقاصد

            اس سے مراد وه مقاصد ہيں جن پر لوگوں كى دينى اور دنياوى زندگى كا دارومدار ہے، كہ اگر يہ سب يا  ان ميں سے كوئى مفقود ومعدوم يا خراب ہو، تو لوگوں كا رہن سہن اور زندگى تباه برباد ہوجاتى ہے، اور دنيا ميں  ان كا رہنا  نا ممكن ہوجاتا ہے زندگى قائم نہيں ره سكتى، اور اسى طرح اخروى نعمتوں سے محرومى اور عذابِ آخرت مقدر بن جاتا ہے، اور يہ بنيادى اور اہم ترين مقاصد  پانچ ہيں: دين، جان، عقل، نسل اور مال كى حفاظت، بنى نوع انسان كى زندگى كى تعمير وبقاء اور دنيا  وآخرت ميں اس كى سعادت ميں ان كى اہميت كے پيش نظر تمام سابقہ اديان سماوى نے بهى ان بنيادى مقاصد كى حفاظت كا خيال ركها ہے-

            شريعت اسلامى نے بهى ان بنيادى اہم مقاصد كو مدد نظر ركها ہے،  اور اس كے لئے كئى احكام وضع كئے ہيں، ان ميں سے بعض ان كے حصول ووجود اور قوت كى ضمانت  ہيں، اور بعض دوسرے احكام ان مقاصد كو نقصان اور خطرات سے بچا كر ان كى بقاء كى ضمانت فراہم كرتے ہيں، چناچہ ان بنيادى مقاصد كى حفاظت ميں شريعت ا سلامى كى دوہرى ذمہ دارى ہے، وه ان كے قيام وثبات اور اركان كى تكميل كے لئے قانون سازى كے ساتھ ساتھ انہي خطرات سے بچانے كے لئے بعض دوسرے احكام بهى وضع كرتى ہے

دين كى حفاظت:

  1. اس كو قائم ركهنے كے لئے الله تعالى، اس كے فرشتوں، كتابوں، تمام رسولوں، اور يوم آخرت پر ايمان، دونوں شہادتيں، عبادت اور ان كے احكام پر عمل كرنا  واجب اور ضرورى ہے-
  2. اس كى حفاظت كے لئے جہاد كرنا، مرتد اور بدعتى كو سزا دينا، نيكى كا حكم دينا اور برائى سے منع كرنا اور لوگوں كے عقيدے اور ايمان كو خراب كرنے والوں كا مقابلہ كرنا  واجب ہے-

جان  كى حفاظت:

(أ) اس كو قائم ركهنے كے لئے كهانے، پينے، پہننے اور رہنے كے لئے احكام مقرر كئے گئے-

(ب) اس كى حفاظت كےلئے قصاص اور ہلاكت ميں ڈالنے كى ممانعت، حدود  اور احكام، ميراث اور وصيت سے محرومى كے احكام وضع كئے گئے ہيں-

عقل كى حفاظت:

(أ) اس كو قائم ركهنے كے لئے (بيان كرده) جان كى حفاظت كے لئے تمام احكام كے ساتھ ساتھ طلب علم اور غور وفكر كا حكم دياگيا ہے -

(ب) اس كى حفاظت كے لئے شراب كى حرمت نازل ہوئى، اور پينے والے كى سزا مقرر كى گئى، نشہ آور اور منشيات كو حرام كرنے ساتھ ساتھ فاسد عقائد اور خرافات سے بهى منع كيا گيا ہے-

نسل كى حفاظت:

(أ) شريعت نے اس كو قائم ركهنے كے لئے شادى كو جائز قرارديا

(ب) اس كى حفاظت كے لئے حد زنا، حد قذف مقرر كى گئى اور عورت كے حمل ضائع كرنے كو حرام قرارديا گيا-

مال كى حفاظت:

(أ) حصولِ مال اور اسے كمانے كے لئے ، عمل وسعى، خريد وفروخت اور كرائے كے احكام واجب كئے گئے-

(ب) اس كى حفاظت كے لئے چورى، ڈاكہ زنى، غصب، سود اور ذخيره اندوزى كو حرام كيا گيا، اسى طرح چورى اور ڈاكہ كى حد، غاصب اور حملہ آور كى تعزيز، كم عقل انسان كو اپنے مال سے خرچ كرنے كى ممانعت كے احكام وضع  كئے گئے-

              الله تعالى نے نبى اور پيغمبر زندگى كو قائم كرنے كے لئے ، اور انسان كى حفاظت كے لئے بهيجے ، دين كا مقصدہىانسانى زندگى ميں استقامت اور توازن پيدا كرنا ہے ، اسلام نےدين اور دنيا دونوں كے دامن كو پكڑنے كا حكم ديا ہے اور ايك ايسا راستہ بنايا ہے جس پر چلنے والا كبهى بهى نقصان ميں نہيں پڑے گا.شريعت كے عمومى مقاصد كو تفصيل سے جاننے كے لئے اس كا دوسرا حصہ بهى ملاحظہ فرمائيں

 

Print

Please login or register to post comments.

 

نئى تاريخى دستاويز ات ... فلسطينى عوام كے خلاف قابض صہيونى جرائم كى گواه

صہيونى  اخبار"ہارٹس" نے   اپنے  گزشتہ ہفتہ وارضميمہ ميں   چند  تاريخى دستاويزات كے حوالے سے ايك رپورٹ  شائع كى،   يہ  دستاويزات- 1948ء سے  فلسطينى   زمين پر...

كهيل... تعارف اور ہم آہنگى

     مرصد الازہر برائے انسدادِ انتہا پسندى  نے  مصر ميں منعقد ہونے والے افريكان ورلڈ كپ كى مناسبت سے "كهيل ... تعارف اور ہم آہنگى" كے نام سے آج صبح ايك آگاہى  مہم  كا آغاز كيا،  جو 12 زبانوں...

انسانيت كے نام ايك دستاويز

     "انسانى بهائى چاره (اخوت) كى دستاويز" كہہ ديں يا "انسانيت كى  دستاويز"، شيخ الازہر اور وٹيكن كے پوپ نے چند مہينوں پہلے  فرورى ميں ايك عالمى اور تاريخى دستاويز پر دستخط كى، جس كا مقصد دنيا...

نیوزی لینڈ كى مسجد ميں نمازيوں پر خوفناك دہشتگردانہ حملے كے بارے ميں فضيلتِ مآب شيخ الازہرڈاكٹر احمد الطيب كا بيان

نمازِ جمہ كے دوران نيوزيلينڈ كے  كرائسٹ چرچ ميں ايك  مسجد پر  دہشت گرد حملہ   كى خبروں كو ميں نہايت  غم واداسى سے ديكھ رہا ہوں،جس كے نتيجہ ميں   پچاس افراد ہلا ك اور  اتنى ہى تعداد ميں  لوگ زخمى...

1345678910Last

شاہ بحرین کے استقبال کے دوران : ہم بحرینی قوم کی یکجہتی اور اس کی استقلالیت کی تایید کرتے ہیں اور اس کے اندرونی مسائل میں دخل اندازی نہ کرنے کی دعوت دیتے ہیں۔
جمعرات, 28 اپریل, 2016
شاہ بحرین : حقیقی اسلامی ثقافت کی حفاظت کے لۓ ازہر شریف کے کردار کی اہمیت کی تعریف بیان کرتے ہیں۔ آج فضیلت مآب امام اکبر نے شاہ بحرین "حمدین عيسى آل خلیفہ" اور ان کی رفقت میں موجود وفد کا استقبال کیا جو آج کل قاہرہ کے دورے پر ہیں۔...
امام اکبر کے مونستر شہر میں تاریخی ہال "السلام" کے دورے کے دوران: "معاشروں کے مابین امن وامان، انٹر ریلجس ڈائیلاگ سے شروع ہوتا ہے"
جمعرات, 17 مارچ, 2016
جرمن شہر مونستر کے میئر کی دعوت پر فضیلت امام اکبر شیخ ازہر اور مسلم علماء کونسل کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر احمد الطیب  نے  تاریخی "السلام" ہال کا دورہ کیا جس میں 1648ء میں عقائدی جنگ کو ختم کرنے کے لۓ امن وسلام کے معاہدے پر...
مونسٹر یونیورسٹی میں امام اکبر کا خیر مقدم..
جمعرات, 17 مارچ, 2016
امام اکبر کچھ دیر بعد "مذاہب میں امن وامان کی بنیادیں" کے عنوان سے ایک تقریر پیش کریں گے۔ فضیلت امام اکبر شیخ ازہر اور مسلم علماء کونسل کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر احمد الطیب  "مذاہب میں امن وامان کی بنیادیں" کے عنوان سے ایک...
First45679111213

پُرامن معاشره كى تشكيل ميں تعليم كا كردار
     تعليم ہر انسان  چاہے وہ  امير ہو يا غريب ، مرد ہو يا عورت  كى بنيادى ضرورتوں ميں سے...
پير, 9 ستمبر, 2019
فريضۂ حج
پير, 2 ستمبر, 2019
اولاد كے حقوق
پير, 2 ستمبر, 2019
عہد كى پابندى
جمعرات, 25 جولائی, 2019
135678910Last

دہشت گردى كے خاتمے ميں ذرائع ابلاغ كا كردار‏
                   دہشت گردى اس زيادتى  كا  نام  ہے جو  افراد يا ...
جمعه, 22 فروری, 2019
اسلام ميں مساوات
جمعرات, 21 فروری, 2019
دہشت گردى ايك الميہ
پير, 11 فروری, 2019
1345678910Last