امام اکبر ، فرانس کے قومی اسمبلی کے صدر کلود بارتلون سے اپنی ملاقات کے درمیان

  • 31 مئی, 2016
امام اکبر ،  فرانس کے قومی اسمبلی کے صدر کلود بارتلون سے اپنی ملاقات کے درمیان
امام اکبر، ازہر شریف کے شیخ اور حکماء المسلمین کے قابل قدر صدر گرامی نے پرزور انداز میں ارشاد فرمایا ہے کہ یوروپ میں اماموں اور داعیوں کے لئے ایک متحد نظام عمل کی ضرورت ہے جس کے ذریعہ ملک کے لئے مفید کام کئے جا سکے اور بغیر تحریف وتبدیلی اور مغالطے کے صحیح اسلامی تہذیب وثقافت اور صحیح اسلامی فکر کی نشر واشاعت کی جا سکے ۔
امام اکبر نے فرانس کے قومی اسمبلی کے صدر کلود بارتلون سے اپنی ملاقات کے درمیان کہا کہ ملک میں امن وامان اور تمام لوگوں کے خون کی حرمت یہ ایک لال نشان ہے جس کی حفاظت کے لئے تعاون ضروری اور لازم ہے اور یہ بھی واضح کیا کہ ازہر شریف لوگوں کے مابین امن وسلامتی کے فروغ اور باہمی تعاون کے لئے مزید جدوجہد کرنے کے لئے تیار ہے ۔
امام اکبر نے مزید فرمایا کہ دہشتگردی سے مقابلہ کرنے کے لئے ازہر فرانس کے ساتھ ہے اور یہ بھی واضح کیا کہ ازہر مسلسل مقامی، علاقائی اور عالمی تمام سطح پر وسطیت واعتدال اور امن وآشتی کی نشر واشاعت اور غلط مفہوم کی تصحیح کے سلسلہ میں مسلسل کوشش کرتا رہے گا، اور امام اکبر نے یہ بھی واضح کیا کہ جو کچھ بعض منحرف شدہ اور اسلام کی طرف جھوٹی نسبت کرنے والی جماعتوں اور تنظیموں کے ذریعہ سے ہو رہا ہے وہ ذرہ برابر بھی اسلام کی تعبیر نہیں ہے، یہ بھی اشارہ کیا کہ مصر اور فرانس کے تعلقات دہشتگردی سے مقابلہ میں حقیقی شراکت کی ترجمانی کریں گے اور ازہر شریف اور جامعہ ازہر اور اس کے دیگر تمام شعبے متشدد افکار کے مقابلہ میں ہمیشہ بر سر پیکار رہیں گے اور دہشتگردی کے مقابلے میں فرانس کا مصر کے ساتھ یہ موقف بڑے تعاون کی ترجمانی ہے جبکہ مصر خود بعض علا  قے میں دہشتگردی کے عناصر سے دوچار ہے ۔
امام اکبر نے اس بات کو بھی سراہا کہ فرانس مسئلہ فلسطین کے لئے انصاف پر مبنی ایک حل کی تلاش میں سرگرداں ہے اور اس پر بھی زور دیا کہ ازہر ان تمام کوششوں کی ہمت افزائی کرتا ہے اور تمنا کرتا ہے کہ اس کے اثرات جلد سے جلد ظاہر ہوں ۔
فرانس کے قومی جمعیت کے صدر "کلود بارتولون" نے امام اکبر کا استقبال اس بات کی تاکید کرتے ہؤے  کیا کہ امام اکبر کا فرانس کا یہ سفر بہت ہی اہم وقت میں ہوا ہے اور اس بات کی بھی وضاحت کی ہے کہ ان کا ملک فرانس اسلام اور بعض شدت پسند لوگوں کی طرف سے کئے جانے والے جرائم کے درمیان فرق کرتا ہے -
اور بارتولون نے کہا کہ ہمیں ضرورت ہے کہ ہم نوجوانوں کی فکر اور ان کا اہتمام کریں اور ان کے لئے ہر طرح کے میدان کهویں، اسی طرح ہم پر لازم ہے کہ ہم فرانس کے اماموں کا بھی اہتمام کریں کہ ہمارے اوپر ان کی بھی بڑی ذمہ داریاں ہیں اور اس بات پر بھی زور دیا کہ اس سلسلہ میں ازہر شریف کی شراکت اور اس کی طرف سے اقدام بہت ہی اہم ہے ۔
فرانس کی قومی اسمبلی کے صدر نے یوروپ اور پوری دنیا کے مسلمانوں کے نام    امام اکبر کے عالمی خطاب کی تعریف میں اس بات کی وضاحت کرتے ہؤے کہا کہ فرانس اور یوروپ میں رہنے والے مسلمانوں کے نام مثبت ہم آہنگی سے متعلق امام اکبر کی گفتگو اس لائق ہے کہ فرانس کے ان  مسلمانوں پر گہرا اثر ثبت کرے جن کی نگاہیں ہمیشہ ازہر شریف اور امام اکبر کی طرف ہوتی ہے -
اور بارتولون نے مزید کہا کہ ہم مسلمانوں کے امام اکبر کے استقبال کے تئیں بہت ہی فکرمند تھے کیونکہ آپ لوگ ایک بہت ہی قدیم، معروف اور مشہور عظیم ادارے کے نمائندہ ہیں جس کی قیمت اہل فرانس بہت اچہی طرح جانتے ہیں، جیسا کہ یہ لوگ مصر کی قدیم اور عظیم تہذیب وتمدن کو جانتے ہیں، اور اس کی بھی تاکید کیا کہ اس ملک کے باشندے اچھی طرح جانتے ہیں کہ اس ملک میں مصر کا کیا مقام ومرتبہ ہونا چاہئے ۔
فرانس کے قومی اسمبلی کے صدر نے پر زور انداز میں کہا کہ ان کا ملک مصر اور ازہر شریف سے اپنا تعلق مضبوط کرنے کا خواہش مند ہے لہذا مشرق ومغرب میں ہمارا انجام ایک دوسرے سے مرتبط ہے، اور ہم آپ لوگوں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ثابت قدمی کے ساتھ دہشتگردی کا مقابلہ کریں اور اس کے خلاف فرانس مصر اور دنیا کے تمام ملکوں میں زبردست کوشش کریں ۔
 
 
Print
Tags:
Rate this article:
No rating

Please login or register to post comments.

Name:
Email:
Subject:
Message:
x