اِسلام اور تہذیب وتمدن ‏(1) ‏

  • 13 فروری 2019
اِسلام  اور تہذیب وتمدن ‏(1) ‏

                       ارشادِ الہى ہے: "وَمِنْ آيَاتِهِ خَلْقُ السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضِ وَاخْتِلَافُ أَلْسِنَتِكُمْ وَأَلْوَانِكُمْ إِنَّ فِي ذَٰلِكَ لَآيَاتٍ لِّلْعَالِمِينَ" (اور اسی کے نشانات (اور تصرفات) میں سے ہے آسمانوں اور زمین کا پیدا کرنا اور تمہاری زبانوں اور رنگوں کا جدا جدا ہونا۔ اہلِ دانش کے لیے ان (باتوں) میں (بہت سی) نشانیاں ہیں) [سورۂ روم: 22] انسان کی مدنی زندگی اور اجتماعی زندگی کے لیے، تہذیب ایک فطری اور لابدی چیز ہے۔ "تہذیب" سے مراد وہ نظریات وتصورات ہیں، جن کے مطابق کوئی جماعت یا قوم زندگی گزارے  اور اس کو اپنا مقصد بناۓ۔ یہ بنیادی عقائد اور بنیادی نظریات اتنے واضح ہوتے ہیں کہ ہر قوم دوسری قوم سے مختلف ومنفرد نظر آتی ہے چنانچہ تہذیب کسی قوم کی پہچان اور شناخت ہے۔  ہمارا ہر عمل اور فعل کسی نظریے اور عقیدے کا نتیجہ ہوتا ہے۔ پہلے ہم کسی کام کے بارے میں سوچتے ہیں اور پھر اس سوچ کے مطابق عمل کرتے ہیں۔  اس طرح "تہذیب" خیالات، تصورات اور افکار وعقائد کا نام ہے ۔ اور ان تصورات وافکار کے تحت جو افعال واعمال ظاہر ہوتے ہیں اور جو سیرت وکردار تشکیل  پاتے ہیں، انہیں "تمدن" کا نام دیا جاتا ہے۔ اس كا مطلب يہ ہے كہ  تہذیب وتمدن لازم وملزوم ہیں۔  اور يہ اسلام كے منفى ہرگز نہيں ہے ، بلكہ اسلامی تہذیب کی اپنی منفرد حیثیت ہے، یہ تہذیب اسلام کے عقائد اور اصول ونظریات اور روایات کی نمائندہ وترجمان ہے۔ اسلام  کا ایک منہاج حیات ہے، چنانچہ اسلامی تہذیب اسی منہاج حیات کی عکاسی کرتی ہے۔ اسلامی تہذیب کا بنيادى  تصور يہ  ہے کہ انسان کی حیثیت اس دنیا میں عام موجودات کی سی نہیں ہے بلکہ وہ خالق کائنات کی طرف سے یہاں خلیفہ بنا کر اتارا گیا ہے۔ لہذا انسان کا اصل نصب العین یہ ہے کہ وہ اپنے خالق اور اپنے آقا کی خوشنودی حاصل کر لے۔  اور اس کو پورا کرنے کے لیے ضروری ہے کہ وہ خدا کی صحیح معرفت حاصل کرے۔ اسلامی نقطۂ نظر سے آنے والی زندگی کی کامیابی اس دنیوی زندگی کی کامیابی اور اس کے بناؤ سنوار پر منحصر ہے۔  انسان کی اصل کامیابی وکامرانی پیغمبروں کے بتاۓ ہوۓ طریقے پر عمل کرنے میں مضمر ہے۔ اسلامی تہذیب کے عناصر سے مراد وہ بنیادیں ہیں، جن پر اسلام کا عظیم الشان محل استوار اور تعمیر کیا گیا ہے ۔ اللہ تعالى نے فرمایا: "وَلَقَدْ كَرَّمْنَا بَنِي آدَمَ وَحَمَلْنَاهُمْ فِي الْبَرِّ وَالْبَحْرِ وَرَزَقْنَاهُم مِّنَ الطَّيِّبَاتِ وَفَضَّلْنَاهُمْ عَلَىٰ كَثِيرٍ مِّمَّنْ خَلَقْنَا تَفْضِيلًا" (اور ہم نے بنی آدم کو عزت بخشی اور ان کو خشکی اور تری میں سواریاں دیں اور ان کو پاک چیزوں سے رزق عطا کیا اور بہت سی ان چیزوں پر جو ہم نے پيدا کی ہیں، ان کو ایک طرح کی فضیلت عطا کی ہے) [سورۂ اسراء: 70]۔

                      اسلامی تہذیب وتمدن  کی  اہم ترين خصوصیات ميں تصور توحید،  اخوت اسلامی، مساوات انسانی، عالمگیر اور   جامع تہذیب،  دین ودنیا میں مطابقت،  طہارت وپاکیزگی، سادگی، عدل واحسان، انسانی شرف واکرام،  اصلاحی تہذیب، فرد اور جماعت میں توازن، دائمی وابدی تہذیب، ڈسپلن ونظم وضبط اور اخلاق حسنہ ہيں ۔

                     اسلامی تہذیب دنیا کی دیگر اقوام کی تہذیب وتمدن سے ممتاز ومنفرد نظر آتی ہے۔ اسلام چونکہ ایک مکمل ضابطہ حیات ہے اور اس نے زندگی کے ہر معاملے سے بحث کی ہے،  اس لیے ہماری دنیوی زندگی کا ایک واضح نصب العین ہے اس نے فرد اور معاشرے کے باہمی تعلقات کی حدود واضح كى ہے  اور ، اخلاق و سیرت وکردار کی نہایت اعلى اور کامل تعلیم پیش کی ہے۔  اسلامی تمدن  وہ نظام زندگی ہے جو خدا کے پیغمبروں نے وحی الہی کے ذریعہ سے پیش کیا۔ اس کی بنیاد خدا کی ذات وصفات پر صحیح ایمان، عقیدۂ توحید، انسان کے اس دنیا میں خلیفۃ اللہ ہونے، آخرت کی زندگی پر ایمان، انسانی مساوات کے نظريہ، اجتماعی عدل وانصاف، خدمتِ خلق اور احساسِ ذمہ داری پر رکھی گئی ہے۔ یہ تمدن علمی اور عقلی حیثیت سے بھی دنیا کا بہترین تمدن ہے اور عملی لحاظ سے بھی، جب کبھی قائم ہوا ہے تو انسانی معاشرہ جنت کا نمونہ بن گیا ہے۔

                     ان شاء اللہ اگلے مضامین میں ہم اسلامی تہذیب کی خصوصیات ،مشہور علمائے اسلام کی زندگی، ان كى تعلیم ، علمی اثرات اور ایجادات کے بارے میں بات كريں گے۔  

(ماخوذ بتصرف: آئنۂ اسلامی تہذیب وتمدن، محمد مزمل احسن شیخ اور دوسروں کی)

Print

Please login or register to post comments.

 

اسلام امن وسلامتى كا مذہب ہے

                 الله تعالى نے  دنيا ميں اپنے پيغام كو لوگوں تك پہنچانے كے لئے انبيا اور رسولوں كى مدد ليتے ہوئے مختلف اديان ومذاہب نازل كئے، اسلام سے قبل بھى انسانوں كے مابين تعلقات ميں توازن...

تعاون كى قيمت

                   "ايك ہاتھ سے تالى نہيں بجتى"، ايك نامور ضرب المثل ہے جو كہاوتيں عام طور پر زندگى كے تجربوں كے خلاصہ كو بيان كرتى ہيں، جسے انسان اپنى زندگى كے مختلف مراحل ميں حاصل كرتا...

انسان كون ہے‎!‎؟

                 انسان ہى اس پورى كائنات كا مركز اور محور ہے پس اس كائنات كى ہر چيز اس كے تابع ہے اور تمام اديان اسى كے لئے نازل ہوئے اور سارى آسمانى وحى كا مخاطب بهى وہى ہے،  قرآن كريم  كى...

اور لوگوں كو اچهى باتيں كہنا...‏

کلمہ... لفظ يا بات كى زمدارى ایک امانت ہے، اس کے کہنے والوں کو چاہئے کہ اس بارے میں اللہ تعالى سے اتنا ڈرے، جتنى اسکي اہمیت و عظمت ہے اور جتنى اسکي وجہ سے بڑا خیر وجود میں آتا ہے یا بھیانک تباہي،بلا شبہ کلمہ (بات) کى امانت اور اسکى ذمہ داریاں...

First2345791011Last

ازہرشريف: چھيڑخوانى شرعًا حرام ہے، يہ ايك قابلِ مذمت عمل ہے، اور اس كا وجہ جواز پيش كرنا درست نہيں
اتوار, 9 ستمبر, 2018
گزشتہ کئی دنوں سے چھيڑ خوانى كے واقعات سے متعلق سوشل ميڈيا اور ديگر ذرائع ابلاغ ميں بہت سى باتيں كہى جارہى ہيں مثلًا يه كہ بسا اوقات چھيڑخوانى كرنے والا اُس شخص كو مار بيٹھتا ہے جواسے روكنے، منع كرنے يا اس عورت كى حفاظت كرنے كى كوشش كرتا ہے جو...
فضیلت مآب امام اکبر کا انڈونیشیا کا دورہ
بدھ, 2 مئی, 2018
ازہر شريف كا اعلى درجہ كا ايک وفد فضيلت مآب امامِ اكبر شيخ ازہر كى سربراہى  ميں انڈونيشيا كے دار الحكومت جاكرتا كى ‏طرف متوجہ ہوا. مصر کے وفد میں انڈونیشیا میں مصر کے سفیر جناب عمرو معوض صاحب اور  جامعہ ازہر شريف كے سربراه...
شیخ الازہر کا پرتگال اور موریتانیہ کی طرف دورہ
بدھ, 14 مارچ, 2018
فضیلت مآب امامِ اکبر شیخ الازہر پروفیسر ڈاکٹر احمد الطیب ۱۴ مارچ کو پرتگال اور موریتانیہ کی طرف روانہ ہوئے، جہاں وہ دیگر سرگرمیوں میں شرکت کریں گے، اس کے ساتھ ساتھ ملک کے صدر، وزیراعظم، وزیر خارجہ اور صدرِ پارلیمنٹ سے ملاقات کریں گے۔ ملک کے...
1345678910Last

عيد الفطر
     پيغمر اسلام ؐ جب ہجرت كر كے مدينہ آئے تو وہاں كے لوگ ايك سالانہ تہوار منايا كرتے تھے،  اس ميں كھيل تماشا ...
منگل, 4 جون, 2019
زكات
پير, 27 مئی, 2019
12345678910Last

دہشت گردى كے خاتمے ميں ذرائع ابلاغ كا كردار‏
                   دہشت گردى اس زيادتى  كا  نام  ہے جو  افراد يا ...
جمعه, 22 فروری, 2019
اسلام ميں مساوات
جمعرات, 21 فروری, 2019
دہشت گردى ايك الميہ
پير, 11 فروری, 2019
12345679Last