شیخ الازہر کے اقوال سے

  • | جمعرات, 22 دسمبر, 2016

- "عرب اور مسلمان بین الاقوامی سازشوں کا سامنا کر رہے ہیں، جن کا مقصد مسلمانوں کی تشتیت اور تفرق ہے اور عالمی صہیونی منصوبے کے مطابق دنیا پر اپنا قبضہ جمانا ہے، ایسا کرنے کے لئے ان کا ایک ہی طریقۂ کار ہے اور وہ ہے " تقسیم کے ذریعہ حکمرانی" وہ مذہبی کشیدگی اور طائفی اختلافات کا فائدہ اُٹھا رہے ہیں اور افسوس در افسوس وہ اس اُمت سے مکاری اور غداری کے کھیل کھیل کر اُن پر حکمرانی کرنے میں کامیاب ہوئے اور نتیجہ یہ ہوا کہ عراق مسلمانوں کے ہاتھوں سے کھو بیٹھا، شام جل گیا، یمن ٹوٹ گیا، لیبیا برباد ہوگیا اور اللہ جانے اُن کی وجہ سے اور کیا کیا ہوگا!! آئیں .... آپس کے اختلافات اور مشکلات کو بھول جائیں کیونکہ یہ اختلافات ہماری کمزوری اور ذلت کا سبب ہیں اور اتحاد کے دامن کو مضبوطی سے پکڑیں کیونکہ اسی سے ہماری فلاح اور کامیابی ہوگی۔

- يہ دہشتگرد گروه سمجتهے ہیں كہ فقط وه مسلمان لشكروں كےسپہ سالار ہیں اور كافروں  ( جن ميں بيشتر مسلمان شامل ہیں ) کے خلاف جنگ لڑ رہے ہیں، وه اُن خوارج كى پيروى كرتے ہیں جنہوں نے پرانے اور جديد دور ميں تكفير كا عقيده يا منہج اپنا كر مسلمانوں كے اتحاد كو چكنا چور كر ديا تها۔"

Print
Tags:
Rate this article:
No rating

Please login or register to post comments.