‎”امام، پوپ اور مشکل راستہ" انسانی اخوت کی دستاویز کے مختلف مراحل پر لکھی جانے والی ایک تاریخی کتاب ہے، جو اس سال قاہرہ انٹرنیشنل بک فئیر میں الازہر اور مسلم علما کونسل کے کارنر میں دستیاب ہے
اتوار, 4 جولائی, 2021
  ‎۔ اس کتاب کے مصنف جسٹس محمد عبد السلام ہیں، جو انسانی اخوت  کی اعلی کمیٹی کے سیکریٹری جنرل اور پروفیسر ڈاکٹر احمد الطیب شیخ الازہر کے سابق مشیرکار  بھی ہیں۔ ‎شیخ الازہر پروفیسر ڈاکٹر احمد الطیب اور رومن کیتھولک...
ازہر شريف: رفیوجیز دوگنے مشکلات اور بحرانوں کا سامنا کررہے ہیں۔ عالمی برادری پر ان کی حمایت اور حفاظت فرض ہے۔
پير, 21 جون, 2021
  ازہر شريف ساری دنیا کو جدید دور کے تارکینِ وطن کے مسائل کی یاد دلاتی ہے ... جن میں سے قدیم ترین مسئلہ "فلسطینی مہاجرین كا مسئلہ" ہے۔ 20 جون پناہ گزینوں کا عالمى_دن ہے؛ اس موقع پر ازہر شریف تمام دنیا کے ممالک سے مطالبہ كرتا...
"ہم انتہا پسندی کے خلاف جنگ میں الازہر الشريف كے ساتھ تعاون کرنے میں بے حد دلچسپی رکھتے ہیں": قاہرہ میں جاپانی سفیر نے الازہر آبزرویٹری کی کوششوں کو سراہاتے ہوئے كہا
پير, 14 جون, 2021
  گزشتہ اتوار كو الازہر آبزرویٹری برائے انسداد انتہا پسندی نے قاہرہ میں جاپانی سفیر جناب "مساکا نو" کا استقبال كيا، جنہوں نے انتہا پسندانہ نظریات سے نمٹنے میں الازہر آبزرويٹرى كے اہم اور نماياں کردار کے بارے میں جاننے کے لئے...
245678910Last

ازہرشريف: چھيڑخوانى شرعًا حرام ہے، يہ ايك قابلِ مذمت عمل ہے، اور اس كا وجہ جواز پيش كرنا درست نہيں
اتوار, 9 ستمبر, 2018
گزشتہ کئی دنوں سے چھيڑ خوانى كے واقعات سے متعلق سوشل ميڈيا اور ديگر ذرائع ابلاغ ميں بہت سى باتيں كہى جارہى ہيں مثلًا يه كہ بسا اوقات چھيڑخوانى كرنے والا اُس شخص كو مار بيٹھتا ہے جواسے روكنے، منع كرنے يا اس عورت كى حفاظت كرنے كى كوشش كرتا ہے جو...
فضیلت مآب امام اکبر کا انڈونیشیا کا دورہ
بدھ, 2 مئی, 2018
ازہر شريف كا اعلى درجہ كا ايک وفد فضيلت مآب امامِ اكبر شيخ ازہر كى سربراہى  ميں انڈونيشيا كے دار الحكومت جاكرتا كى ‏طرف متوجہ ہوا. مصر کے وفد میں انڈونیشیا میں مصر کے سفیر جناب عمرو معوض صاحب اور  جامعہ ازہر شريف كے سربراه...
شیخ الازہر کا پرتگال اور موریتانیہ کی طرف دورہ
بدھ, 14 مارچ, 2018
فضیلت مآب امامِ اکبر شیخ الازہر پروفیسر ڈاکٹر احمد الطیب ۱۴ مارچ کو پرتگال اور موریتانیہ کی طرف روانہ ہوئے، جہاں وہ دیگر سرگرمیوں میں شرکت کریں گے، اس کے ساتھ ساتھ ملک کے صدر، وزیراعظم، وزیر خارجہ اور صدرِ پارلیمنٹ سے ملاقات کریں گے۔ ملک کے...
12345678910Last

ازہر شريف سے بيان

  • | منگل, 29 دسمبر, 2015

ازہر شريف اپنى دستاويزوں ميں آزادى اور خاص طور پر عقيده كى آزادى كے متعلق آنے جانے والے بيانات پر ان قرآنى نصوص كى بنياد پر تاكيد كرتا ہے  لا إكراه في الدين دین (اسلام) میں زبردستی نہیں ہے (سورة البقرة: 256) اور ارشاد بارى تعالى ہے لكم دينكم ولي دين  تم اپنے دین پر میں اپنے دین پر (سورة الكافرون: 6).
ازہر شريف داعش كى غير انسانى كاروائيوں جس ميں وه مسلمانوں اور غير مسلمانوں كا خون، مال اور عزت اپنے لئے حلال قرار ديتے ہيں كى سخت مذمت كرتا ہے اور اعلان كرتا ہے كہ غير مسلمانوں كو زبردستى اسلام ميں داخل كرانا يا عورتوں كو اغوا كر كے اُن كى عزت كو لوٹنا اور ا نكوغلام بنانا جبكہ اسلام ہى نے غلامى كو دنيا سے ختم كيا اور اُس كو دوباره منظر عام پر لانا ايك دينى، اخلاقى اور انسانى جرم ہے اور اسلام اور اُس كى روادار  اور معتدل شريعت كے بالكل خلاف ہے. ازہر شريف اس بات كى تاكيد كرتا ہے كہ اس تنظيم كو -شريعت كے نقطۂ نظر سے-جہاد كى دعوت دينے كا كوئى حق نہيں ہے اور نہ ہى  اس كو لوگوں  كوزبردستى اپنے مذہب چهڑوانے يا ترك كرانے كا حق ہے
ازہر شريف اس بات كى تاكيد كرتا ہے كہ كسى انسان كو زبردستى اپنى شناخت تبديل كرانے يا الشہادتين كہنے يا نماز پڑهنے يا اسلام كے دوسرے فرائض كى ادائيگى پر مجبور كرانے كا يہ مطلب نہيں يہ شخص اسلام ميں داخل ہوگيا ہے اور نہ ہى اِس سے اُس كے عقيدے ميں كوئى تبديلى آسكتى ہے بلكہ يہ اسلام كى شريعت ا ور اس كے احكام كے سراسر خلاف ہے. ازہر شريف ايك بار پهر تاكيد كرتا ہے كہ (مسلمانوں يا غير مسلمانوں) كے خون، آبرو  اور  اموال كو اپنے لئے حلال قرار دينے والا اسلام سے خارج ہوجاتا ہے

 

Print
Tags:
Rate this article:
No rating

Please login or register to post comments.

دہشت گردى كے خاتمے ميں ذرائع ابلاغ كا كردار‏
                   دہشت گردى اس زيادتى  كا  نام  ہے جو  افراد يا ...
جمعه, 22 فروری, 2019
اسلام ميں مساوات
جمعرات, 21 فروری, 2019
دہشت گردى ايك الميہ
پير, 11 فروری, 2019
12345678910Last