احترامِ آدميت

  • 7 فروری 2019
احترامِ آدميت

                 اسلام احترامِ آدميت اور رحمت كا مثالى علم بردار  ہے، ارشاد ِ الہى  ہے: "كَتَبَ ربكم عَلى نَفْسِهِ الرَّحْمَةَ" (اس نے اپنے اوپر رحمت كو لازم قرار دے ليا ہے) [سورۂ انعام: 54]،  رحمت ، الله رب العزت كے ناموں ميں سے ايك ہے نبى  الاسلام ؐ   سراپائے رحمت ہيں،آپ ؐ  كو اللہ تعالى نےتمام جہانوں اور  مخلوقات  كے لئے  رحمت بنا كرمبعوث فرمايا،  یہی وجہ ہے کہ آنحضرت ؐ نے اشرف المخلوقات یعنی انسانوں کو عام طور پر اور مسلمانوں کو خاص طور پر تمام انسانیت اور تمام مخلوقات پر رحم کرنے اور انہیں ایذا رسانی سے بچنے کا حکم فرمایا۔ قرآن پاك ميں  الله سبحانہ وتعالى نبى  پاك ؐ سے ارشاد فرماتا ہے: "وَمَا أَرْسَلْنَاكَ إِلَّا رَحْمَةً لِّلْعَالَمِينَ"  (اور ہم نے آپ كو عالمين كے لئے صرف رحمت بناكر بهيجا ہے) [سورۂ انبياء: ۱۰۷]۔

                امن ورحمت وسكون ومحبت اور احترامِ انسانيت كا پيغام  حضور اكرم نبى كريمؐ كى ايك عظيم الشان  خصوصيت ہے، آپؐ جو دين لے كر آئے ، وہ امن وسلامتى ، رحمت ومحبت، تحمل وبرداشت، اور احترام آدميت كا درس ديتا ہے، لہٰذا احترامِ آدميت کا تقاضا یہ ہے کہ معاشرے میں امن و سلامتی کو فروغ دیا جائے اور ایثار و ہمدردی اور رحم دلی کو اپنایا جائے۔

               اللہ تعالیٰ انسان کی عزت کرتے ہیں، قرآن پا ك ميں انسان كى  عظمت وتكريم  كا ذكر كيا گيا، ارشاد بارى "وَلَقَدْ كَرَّمْنَا بَنِي آدَمَ" (اور ہم نے بنی آدم کو عزت بخشی) [ سورۂ اسراء:70]، انسان بہت ہی مکرم ہستی ہے اور جب خود خدا انسان کی عزت کرتا ہے تو پھر انسان خود انسان کی عزت کیوں نہ کرے؟۔

               انسان کی قدروقیمت اس ساری کائنات میں ، کائنات کی ہر چیز سے زیادہ ہے، کیونکہ اللہ تعالیٰ نے انسان کو اپنا نائب بنا کر اِس زمین پر بھیجا ہے، اسلام بے گناہ انسان  كى  جان كا قتل پورى انسانيت كے قتل كى مانند  قرار ديتا ہے، اللہ تعالى كا ارشاد ہے: "مَن قَتَلَ نَفْسًا بِغَيْرِ نَفْسٍ أَوْ فَسَادٍ فِي الْأَرْضِ فَكَأَنَّمَا قَتَلَ النَّاسَ جَمِيعًا" (جو شخص کسی کو (ناحق) قتل کرے گا (یعنی) بغیر اس کے کہ جان کا بدلہ لیا جائے یا ملک میں خرابی کرنے کی سزا دی جائے اُس نے گویا تمام لوگوں کو قتل کیا) [سورۂ مائده:32]۔حضور پاك  نےخطبہ وداع ميں انسانى جان كى قيمت وحرمت كو بيت الله يعنى  كعبة  الله سے زياده بتايا۔

               اسلام نے بلاتفریق مذہب وملت پوری انسانیت کے  احترام كو لازمى قرار دیا ہے،اسلام سلامتی اور ایمان امن سے عبارت ہے،اسلام اور پیغمبراسلام ،حضرت محمدؐ کی تعلیمات بلاشبہ احترام انسانیت ،انسانی حقوق اور امن کی سب سے بڑی ضامن ہیں۔الله كى عظيم ہستى نے انسان كو عزت دى، اس كا احترام كيا، اس كو ان گنت نعمتوں سے نوازا  ، اور اس كو باقى تمام مخلوقات سے برتر قرار ديا. اسلام اور اس كے نبىؐ  نے بهى انسان  كى ہر صورت ميں تكريم كو واجب قرار ديا، دنيا ميں اس كے وجود كے پہلے دن ہى اس كے والدين كو اس كے  لئے اچها  نام  اختيار كرنے كا حكم ديا، بچوں كے ساتھ شفقت سے پيش آنے كى تاكيدكى۔ اس عظيم دين كے مثبت  پہلوؤں پرروشنى  ڈالنے  سےہميں انسان كى قدر وقيمت كا  اندازه ہو تا ہے،  اور ہميں ہى اس قيمت كى حفاظت كرنى چاہيے۔ 

Print

Please login or register to post comments.

 

صفائى كى اہميت

                  "صفائى نصف ايمان ہے"، يعنى كہ صفائى ايمان كا  ايك نہايت اہم جزء ہے، اسى وجہ سے انسانى طرز عمل ميں اس كى بہت زياده اہميت ہےكيونكہ يہ ايك پسنديده يا مرغوب صفت ہى...

حضور اكرمؐ كا حلم

                  ہم میں سے ہر ايک دنيا وآخرت كى بھلائى وكاميابى كا خوش مند ہے اس كے لئے  ہميں ہر معاملے ميں ہمارے پيارے آقاؐ كى اطاعت وپيروى كرنى ہوگی،كيونكہ رسول اللهؐ كے اقوال وافعال، اخلاق...

حضورؐ كى سخاوت

                 سہولت اور آسانی کے ساتھ خرچ کرنے کو سخاوت کہتے ہیں، يہ كنجوسى اور تنگی کی ضد ہے،كنجوس انسان كو اپنا مال خرچ كرنے يا اپنى كسى بھى چيز  دينے ميں تكليف محسوس ہوتى ہے، نہ صرف مال...

حقيقى ديندارى كيا ہے؟‏

                    دينِ اسلام نے دنياوى زندگى اور معاشرے سے عليحدگى اور خلوت نشينى كى دعوت نہ دى ہے اور نہ ہى دے گا، بلكہ "اسلام تو  ايك مكمل نظامِ حيات ہے" يہ صرف دين كے نام...

12345678910Last

ازہرشريف: چھيڑخوانى شرعًا حرام ہے، يہ ايك قابلِ مذمت عمل ہے، اور اس كا وجہ جواز پيش كرنا درست نہيں
اتوار, 9 ستمبر, 2018
گزشتہ کئی دنوں سے چھيڑ خوانى كے واقعات سے متعلق سوشل ميڈيا اور ديگر ذرائع ابلاغ ميں بہت سى باتيں كہى جارہى ہيں مثلًا يه كہ بسا اوقات چھيڑخوانى كرنے والا اُس شخص كو مار بيٹھتا ہے جواسے روكنے، منع كرنے يا اس عورت كى حفاظت كرنے كى كوشش كرتا ہے جو...
فضیلت مآب امام اکبر کا انڈونیشیا کا دورہ
بدھ, 2 مئی, 2018
ازہر شريف كا اعلى درجہ كا ايک وفد فضيلت مآب امامِ اكبر شيخ ازہر كى سربراہى  ميں انڈونيشيا كے دار الحكومت جاكرتا كى ‏طرف متوجہ ہوا. مصر کے وفد میں انڈونیشیا میں مصر کے سفیر جناب عمرو معوض صاحب اور  جامعہ ازہر شريف كے سربراه...
شیخ الازہر کا پرتگال اور موریتانیہ کی طرف دورہ
بدھ, 14 مارچ, 2018
فضیلت مآب امامِ اکبر شیخ الازہر پروفیسر ڈاکٹر احمد الطیب ۱۴ مارچ کو پرتگال اور موریتانیہ کی طرف روانہ ہوئے، جہاں وہ دیگر سرگرمیوں میں شرکت کریں گے، اس کے ساتھ ساتھ ملک کے صدر، وزیراعظم، وزیر خارجہ اور صدرِ پارلیمنٹ سے ملاقات کریں گے۔ ملک کے...
12345678910Last

قرآناور اخلاقيات
اخلاق كسى  بهى قوم كى زندگى كے لئے ريڑھ كى ہڈى كى حيثيت ركھتا ہے، خواه وه كسى بھى مذہب سے تعلق ركھتى ہو، اخلاق دنيا كے تمام مذاہب كا...
جمعرات, 16 مئی, 2019
روزه كے مقاصد
منگل, 14 مئی, 2019
ماہِ رمضان
پير, 6 مئی, 2019
12345678910Last

دہشت گردى كے خاتمے ميں ذرائع ابلاغ كا كردار‏
                   دہشت گردى اس زيادتى  كا  نام  ہے جو  افراد يا ...
جمعه, 22 فروری, 2019
اسلام ميں مساوات
جمعرات, 21 فروری, 2019
دہشت گردى ايك الميہ
پير, 11 فروری, 2019
12345678910Last