شیخ الازہر USAID کے صدر سے ملاقات کے دوران: جنگوں اور نفرتوں کو روکنا دنیا کے مسائل حل کرنے کا آسان ترین طریقہ ہے
پير, 12 اکتوبر, 2020
  یو ایس ایڈ کے صدر: ہم دنیا میں نفرت اور دہشت گردی کی جڑوں کے خاتمے کے لئے الازہر کے ساتھ تعاون کرنے کے خواہاں ہیں۔  گزشتہ دنوں شیخ الازہر پروفیسر ڈاکٹر احمد الطیب نے واشنگٹن میں امریکی ایجنسی برائے بین الاقوامی ترقی کے قائم مقام...
شیخ الازہر ڈاکٹر احمد الطیب”اسلامی دہشت گردی” جیسی اصطلاح کی شدید مذمت کرتے ہوئے اس کے استعمال کو جرم قرار دینے کا مطالبہ کرتے ہیں۔
جمعه, 2 اکتوبر, 2020
     شیخ الازہر ڈاکٹر احمد الطیب نے مغربی ممالک کے بعض زمہ داران اور عہدیداروں کے “اسلامی دہشت گردی” کی اصطلاح کا استعمال کرنے کے اصرار پر شدید غم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے کہا: وہ اس بات سے بے خبر ہیں کہ اس قسم کی...
الازہر آبزرویٹری: اسپین میں دو خواتین پر حملہ ایک جارحانہ سلوک اور ایک انتہا پسند عمل ہے۔
پير, 28 ستمبر, 2020
  پچھلے ہی دنوں ہسپانوی شہر “ملاگا” میں ایک گلی میں دو مسلمان خواتین کو نفسیاتی اور جسمانی طور پر ہراساں کیا گیا جو یوروپین ممالک میں مسلمانوں کے خلاف انتہا پسند رویوں کے اضافہ کا ثبوت ہے۔   آبزرویٹری اس بات کی تصدیق...
123468910Last

ازہرشريف: چھيڑخوانى شرعًا حرام ہے، يہ ايك قابلِ مذمت عمل ہے، اور اس كا وجہ جواز پيش كرنا درست نہيں
اتوار, 9 ستمبر, 2018
گزشتہ کئی دنوں سے چھيڑ خوانى كے واقعات سے متعلق سوشل ميڈيا اور ديگر ذرائع ابلاغ ميں بہت سى باتيں كہى جارہى ہيں مثلًا يه كہ بسا اوقات چھيڑخوانى كرنے والا اُس شخص كو مار بيٹھتا ہے جواسے روكنے، منع كرنے يا اس عورت كى حفاظت كرنے كى كوشش كرتا ہے جو...
فضیلت مآب امام اکبر کا انڈونیشیا کا دورہ
بدھ, 2 مئی, 2018
ازہر شريف كا اعلى درجہ كا ايک وفد فضيلت مآب امامِ اكبر شيخ ازہر كى سربراہى  ميں انڈونيشيا كے دار الحكومت جاكرتا كى ‏طرف متوجہ ہوا. مصر کے وفد میں انڈونیشیا میں مصر کے سفیر جناب عمرو معوض صاحب اور  جامعہ ازہر شريف كے سربراه...
شیخ الازہر کا پرتگال اور موریتانیہ کی طرف دورہ
بدھ, 14 مارچ, 2018
فضیلت مآب امامِ اکبر شیخ الازہر پروفیسر ڈاکٹر احمد الطیب ۱۴ مارچ کو پرتگال اور موریتانیہ کی طرف روانہ ہوئے، جہاں وہ دیگر سرگرمیوں میں شرکت کریں گے، اس کے ساتھ ساتھ ملک کے صدر، وزیراعظم، وزیر خارجہ اور صدرِ پارلیمنٹ سے ملاقات کریں گے۔ ملک کے...
12345678910Last

ازہر شريف سے بيان

  • | منگل, 29 دسمبر, 2015

ازہر شريف اپنى دستاويزوں ميں آزادى اور خاص طور پر عقيده كى آزادى كے متعلق آنے جانے والے بيانات پر ان قرآنى نصوص كى بنياد پر تاكيد كرتا ہے  لا إكراه في الدين دین (اسلام) میں زبردستی نہیں ہے (سورة البقرة: 256) اور ارشاد بارى تعالى ہے لكم دينكم ولي دين  تم اپنے دین پر میں اپنے دین پر (سورة الكافرون: 6).
ازہر شريف داعش كى غير انسانى كاروائيوں جس ميں وه مسلمانوں اور غير مسلمانوں كا خون، مال اور عزت اپنے لئے حلال قرار ديتے ہيں كى سخت مذمت كرتا ہے اور اعلان كرتا ہے كہ غير مسلمانوں كو زبردستى اسلام ميں داخل كرانا يا عورتوں كو اغوا كر كے اُن كى عزت كو لوٹنا اور ا نكوغلام بنانا جبكہ اسلام ہى نے غلامى كو دنيا سے ختم كيا اور اُس كو دوباره منظر عام پر لانا ايك دينى، اخلاقى اور انسانى جرم ہے اور اسلام اور اُس كى روادار  اور معتدل شريعت كے بالكل خلاف ہے. ازہر شريف اس بات كى تاكيد كرتا ہے كہ اس تنظيم كو -شريعت كے نقطۂ نظر سے-جہاد كى دعوت دينے كا كوئى حق نہيں ہے اور نہ ہى  اس كو لوگوں  كوزبردستى اپنے مذہب چهڑوانے يا ترك كرانے كا حق ہے
ازہر شريف اس بات كى تاكيد كرتا ہے كہ كسى انسان كو زبردستى اپنى شناخت تبديل كرانے يا الشہادتين كہنے يا نماز پڑهنے يا اسلام كے دوسرے فرائض كى ادائيگى پر مجبور كرانے كا يہ مطلب نہيں يہ شخص اسلام ميں داخل ہوگيا ہے اور نہ ہى اِس سے اُس كے عقيدے ميں كوئى تبديلى آسكتى ہے بلكہ يہ اسلام كى شريعت ا ور اس كے احكام كے سراسر خلاف ہے. ازہر شريف ايك بار پهر تاكيد كرتا ہے كہ (مسلمانوں يا غير مسلمانوں) كے خون، آبرو  اور  اموال كو اپنے لئے حلال قرار دينے والا اسلام سے خارج ہوجاتا ہے

 

Print
Tags:
Rate this article:
No rating

Please login or register to post comments.

دہشت گردى كے خاتمے ميں ذرائع ابلاغ كا كردار‏
                   دہشت گردى اس زيادتى  كا  نام  ہے جو  افراد يا ...
جمعه, 22 فروری, 2019
اسلام ميں مساوات
جمعرات, 21 فروری, 2019
دہشت گردى ايك الميہ
پير, 11 فروری, 2019
123456810Last