كافروں كا خون حلال ہے

  • 26 ستمبر 2017
كافروں كا خون حلال ہے

متشدد گروہوں كا كہنا ہے  كہ " اسلام عقلى اصولوں اور حقيقى عدل وانصاف كا دين ہے ان اصولوں ميں سے ايك يہ ہے كہ  ہم پر اس وقت تك لڑنا فرض ہے جب تك  دنيا ميں موجود تمام انسان اسلام نہ لے آئيں۔ اس اصول كے بنا پر ہر اس غير مسلمان كا خون حرام ہے جس كے ساتھ مسلمانوں نے معاہده كيا  ہو اور ہر اس غير مسلمان كو قتل كرنا جائز ہے جس كے ساتھ كوئى شرعى معاہده نہ ہو۔ بخارى اور مسلم سے روايت ہے كہ رسول الله نے فرمايا: «مجھے لوگوں سے لڑنے کا حکم دیا گیا ہے یہاں تک کہ وہ "لا الہ الا اللہ" کا اقرار کریں،مجھ پر ایمان لائیں،میری لائی ہوئی تعلیمات پر ایمان لائیں اگر وہ ایسا کریں تو انہوں نے اپنے خون (یعنی جانیں) اور اپنے مال مجھ سے بچا لیے مگر حق کے بدلے اور ان کے اعمال کا حساب اللہ تعالیٰ کے ذمہ ہے۔»"  

        ان كے اس غلط فكر كى تصحيح لفظ "لوگوں" كى تصحيح سے ہو گى كيونكہ حديث ميں يہ لفظ "لوگ" "عام" ہے ليكن اس سے مراد "خاص" يعنى ايك خاص اور محدد گروه ہے جيسے كہ قرآن مجيد ميں  فرمان الہى  ہے:

  • (اور لوگوں میں حج  كا اعلان كردے كہ تيرے پاس پا پياده اور پتلے دبلے اونٹوں  پر دور دراز راستوں سے آئيں ) (سورۂ حج: 27)  تو آيا تمام "لوگ" مسلمان ہيں كہ  ان كو حج پر جانے كى دعوت دى جائے  !!!؟  دراصل  يہاں  "لوگوں" سے مراد صرف "مسلمان" ہيں۔
  • (اور ماں کی گود میں اور بڑی عمر کا ہو کر (دونوں حالتوں میں) لوگوں سے (یکساں) گفتگو کرے گا اور نیکو کاروں میں ہوگا) (سورۂ آل عمران: 48) تو كيا حضرت عيسىؑ نے تمام "لوگوں" سے بات كريں گے ؟ نہيں،  يہ خطاب صرف بنى اسرائيل كے لئے ہے ، اسى لئے  يہ ہرگز نہں كہا جا سكتا كہ اسلام لانے تك تمام غير مسلمانوں كو قتل كرنا اسلام كے اصولوں ميں سے ہے كيونكہ  جس حديث كو وه دليل كے طور پر استعمال كرتے ہيں صرف مشركين مكہ كے بارے ميں تهى جس نے اُن سے دشمنى موه لى تهى۔ اور ايك خاص زمانہ تك محدود ہے ، الله تعالى نے ہر انسان كى جان كى حفاظت كرنے كا حكم ديا ہے  اور اس كى جان لينے كا حق صرف اس كے خالق كو ہے .اسلام امن وسلامتى كا دين ہے اور بغير تہمت يا الزام كے كسى كو  خود جاكر قتل كر دينا خواه وه مسلمان ہو يا غير مسلمان اسلام كے بنيادى اصولوں كے  خلاف ہے.

 

Print

Please login or register to post comments.

 

دہشت گردى ايك الميہ

                 يہ بات مخفى نہيں ہے كہ ہمارى روشن شريعت عالمگيريت و انسانيت ، رحمت وسلامتى  اور امن  وامان  كى شريعت ہے، وه  انسانيت كى صلاح وفلاح  اورہدايت  وكامرانى...

نوجوان قوم كا قيمتى ‏اثاثہ

                     نوجوان كسى بهى  قوم کا قیمتی سرمایہ ہوتے ہیں، معاشرے میں نوجوانوں کا کردار انتہائی اہم ہوتا ہے،  اپنے معاشرے کا مغز ہوتے ہیں۔اپنے سماج کا آئینہ...

احترامِ آدميت

                 اسلام احترامِ آدميت اور رحمت كا مثالى علم بردار  ہے، ارشاد ِ الہى  ہے: "كَتَبَ ربكم عَلى نَفْسِهِ الرَّحْمَةَ" (اس نے اپنے اوپر رحمت كو لازم قرار دے ليا ہے)...

اسلام ميں خود كشى كى ممانعت

              انسان كى جان اللہ تعالى كى طرف سے ايك عظيم عطا كرده  نعمت ہے،اسلام ميں جان كے تحفظ  كا حق ايك  بنيادى  نوعيت ركھتا ہے،اور اسلام نے انسانى جان  كے تقدس پر  بہت زور ديا...

135678910Last

ازہرشريف: چھيڑخوانى شرعًا حرام ہے، يہ ايك قابلِ مذمت عمل ہے، اور اس كا وجہ جواز پيش كرنا درست نہيں
اتوار, 9 ستمبر, 2018
گزشتہ کئی دنوں سے چھيڑ خوانى كے واقعات سے متعلق سوشل ميڈيا اور ديگر ذرائع ابلاغ ميں بہت سى باتيں كہى جارہى ہيں مثلًا يه كہ بسا اوقات چھيڑخوانى كرنے والا اُس شخص كو مار بيٹھتا ہے جواسے روكنے، منع كرنے يا اس عورت كى حفاظت كرنے كى كوشش كرتا ہے جو...
فضیلت مآب امام اکبر کا انڈونیشیا کا دورہ
بدھ, 2 مئی, 2018
ازہر شريف كا اعلى درجہ كا ايک وفد فضيلت مآب امامِ اكبر شيخ ازہر كى سربراہى  ميں انڈونيشيا كے دار الحكومت جاكرتا كى ‏طرف متوجہ ہوا. مصر کے وفد میں انڈونیشیا میں مصر کے سفیر جناب عمرو معوض صاحب اور  جامعہ ازہر شريف كے سربراه...
شیخ الازہر کا پرتگال اور موریتانیہ کی طرف دورہ
بدھ, 14 مارچ, 2018
فضیلت مآب امامِ اکبر شیخ الازہر پروفیسر ڈاکٹر احمد الطیب ۱۴ مارچ کو پرتگال اور موریتانیہ کی طرف روانہ ہوئے، جہاں وہ دیگر سرگرمیوں میں شرکت کریں گے، اس کے ساتھ ساتھ ملک کے صدر، وزیراعظم، وزیر خارجہ اور صدرِ پارلیمنٹ سے ملاقات کریں گے۔ ملک کے...
124678910Last

حقوق كى ادائيگى ايك پُر امن اور خوبصورت معاشرے كى بنياد
     ہم كسى نہ كسى حيثيت ميں  ايك دوسرے كے حقوق  ادا كرنے كے ذمہ دار ہيں، حضور پاكؐ نے فرمايا:" ايك  مسلمان كے...
هفته, 2 نومبر, 2019
علما كے حقوق اورفرائض
بدھ, 9 اکتوبر, 2019
قرآن ميں عورت
منگل, 8 اکتوبر, 2019
ملازموں كے حقوق
منگل, 1 اکتوبر, 2019
12345678910Last

دہشت گردى كے خاتمے ميں ذرائع ابلاغ كا كردار‏
                   دہشت گردى اس زيادتى  كا  نام  ہے جو  افراد يا ...
جمعه, 22 فروری, 2019
اسلام ميں مساوات
جمعرات, 21 فروری, 2019
دہشت گردى ايك الميہ
پير, 11 فروری, 2019
124678910Last