باطنى جہاد يا ظاہرى جہاد!!‏

  • 30 ستمبر 2018
باطنى جہاد يا  ظاہرى جہاد!!‏

              الله تعالى نے  مسلمانوں  كو دو  قسم كے جہادوں كى اطلاع دى ہے۔ ايك ظاہرى اور ايك باطنى، باطنى جہاد  سے مراد نفس وخواہش، انسانى  طبيعت اور شيطان سے لڑنا ، معصيتوں اور لغزشوں سے توبہ كرنا، اس توبہ پر قائم رہنا اور شہوتوں اور حرام چيزوں كا ترك كرنا ہےاور ظاہرى جہاد  سے مراد  ميدانِ جنگ ميں دشمنوں كا  ہر ممكنہ وسيلہ سےمقابلہ كرنا ہے ،پس جہاد باطن جہاد ظاہر سے زياده سخت اور مشكل ہے ۔ اس لئے كہ وه ہر وقت اور باربار كا جہاد ہے اور جہاد ظاہر سے زياده  كيوں نہ ہو جب كہ وه نام ہے تمام الفت ورغبت والى حرام چيزوں كے قطع كرنے كا اور ان كے چهوڑنے كا اور شريعت كے جملہ احكام بجالانے اور تمام ممنوعات سے باز رہنے كا۔  

              جہاد باطنى آسان عمل ہرگز نہيں ہے، اس قسم كے جہاد  ميں بہت سى چيزيں شامل ہيں جس كے ذريعہ انسان اپنے خالق اور خود اپنے آپ كے سامنے يہ ثابت كرتا ہے كہ وه اپنے رب كى خوشنودى كے لئے اپنى راحت اور آرام كو باآسانى قربان كرنے كے لئے تيار ہے  يہاں تك كہ وہ  دوسروں كے لئے وہى چاہتا ہے جو اپنے لئے چاہتا اور پسند كرتا ہے ۔ نبىؐ نے فرمايا ہے كہ "مومن كا ايمان كامل نہيں ہوتا جب تك وه اپنے مسلمان بهائى كے لئے وہى نہ چاہے جو اپنے نفس كے لئے چاہتا ہے۔"

              جس شخص نے دونوں جہادوں كے متعلق الله كے حكم كى تعميل كى اس كو دنيا اور آخرت دونوں جگہ انعام ملے گا۔  الله كى راه ميں  شہادت پانے والا اپنے جسم ميں لگے زخموں كے درد كو ذرا بهى محسوس نہيں كرتا ، اپنے نفس پر جہاد كرنے والے اور گناہوں سے توبہ كرنے والے شخص كے حق ميں موت ايسى ہى ہے، اور الله كےہاں اس كا درجہ بہت اعلى وبلند ہوگا.

             جہاد باطنى  كى ايك بہت  عام سى مثال  ہمارے ضرورتمند پڑوسيوں يا رشتہ داروں  كى ہر ممكنہ مالى مدد كرناہے مثال كے طور پر اگر آپ كا  پڑوسى فقير  ہے يا آپ كے كوئى  متعلقين حاجت مند ہيں اور  آپ كے  پاس اتنا مال موجود ہے جس پر زكوة واجب ہے اور آپ كو الله كے فضل وكرم سے  تجارت ميں ہر روز نفع حاصل ہوتا ہے جو دن بدن روبہ ترقى ہے اور آپ كے پاس آپ كى  ضرورت سے زياده موجود ہے تو  اس پر بهى ان كو نہ دينا ، درحقيقت ان كے فقر پر جس ميں وه مبتلا ہيں رضامند ہونا ہے ،اور يہى دعوى كمال ايمان كے كذب كى شناخت ہے۔ ليكن جب آپ كا نفس،  آپ كى خواہشات ، اور شيطان  آپ كے پيچهے لگا ہوا ہے تو بے شك خيرات كرنا ہرگز آسان نہيں ہوگا۔  ان خواہشات كو شكست دينا   ہى  وه جہاد ہے جس كے بارے ميں الله كے نبىؐ نے فرمايا كہ "يہ جہاد اكبر ہے۔" جب ہمارے نفس ہمارے قابو ميں ہوں گے اور ہم الله كى مخلوق كا احساس كرنے والے ہوں گے تو پهر ہميں الله كى مدد ونصرت حاصل ہو گى اور اگر ہم اپنے نفسوں كے مغلوب ہوں گے اور صرف جرأت وشجاعت ميں نام پانے كے لئے تلوار اٹهائيں گے تو  الله كى مدد كسى صورت ہمارے ساتھ شامل حال نہ ہو گى۔ الله رب العزت ہميں دونوں قسم كے جہاد كرنے كى توفيق عطا  فرمائے۔ آمين

Print

Please login or register to post comments.

 

روہنگيا مسلمان.... ايك حل طلب بحران

     12 مختلف زبانوں ميں روہنگيا مسلمانوں كے مسئلہ پر ايك بار پهر روشنى ڈالنے كے لئے الازہر آبزرويٹرى برائے انسداد انتہا پسندى  كى جانب سے اس شائع كرده ويڈيو كا ہدف دنيا كے ہر لہجہ ميں برادرى كى انسانى اور سياسى زمہ دارى كو...

قرآن پاک کو جلانا نفرت کے جذبات کو ہوا دیتا ہے اور بین المذاہب مکالمہ کے نتائج کو نقصان پہنچاتا ہے

قرآن پاك کو جلانے كى جرات ركهنے والے مجرموں كو يہ اچهى طرح جان لينا چاہيےکہ یہ جرائم ہر معیار سے وحشیانہ دہشت گردی ہیں ، یہ ایک ايسى نفرت انگیز نسل پرستی اور دہشت گردى  ہے جس كو تمام انسانی تہذیبیں رد كرتى ہیں ، بلکہ يہى اعمال ہى  دنيا...

وَلَا تُفْسِدُوا فِي الْأَرْضِ!! (اور ملك میں خرابی نہ کرنا)

          زندگى ايك نعمت ہے، اس كى حفاظت كے لئے او ر اس كرۂ ارض پر   ايك معزز اور مكرم طريقہ سے رہنے كے لئے الله رب العزت نے كچھ اصول وضوابط مقرر كئے۔ يہ اصول وضوابط الله سبحانہ وتعالى نے اپنے...

اسلام ميں اقليتوں كےحقوق

  اسلام نے انسان كو ايك عظيم مرتبہ عطا كيا ہے،  قرآن پاك ميں يہ صاف طور پر واضح كرديا گيا ہے كہ الله رب العزت نے اس   كائنات كو اس كى خدمت كےلئے مسخر كيا ہے. انسانی حقوق کے بارے میں اسلام کا تصور بنیادی طور پر بنی نوع انسان...

1234567810Last

ازہرشريف: چھيڑخوانى شرعًا حرام ہے، يہ ايك قابلِ مذمت عمل ہے، اور اس كا وجہ جواز پيش كرنا درست نہيں
اتوار, 9 ستمبر, 2018
گزشتہ کئی دنوں سے چھيڑ خوانى كے واقعات سے متعلق سوشل ميڈيا اور ديگر ذرائع ابلاغ ميں بہت سى باتيں كہى جارہى ہيں مثلًا يه كہ بسا اوقات چھيڑخوانى كرنے والا اُس شخص كو مار بيٹھتا ہے جواسے روكنے، منع كرنے يا اس عورت كى حفاظت كرنے كى كوشش كرتا ہے جو...
فضیلت مآب امام اکبر کا انڈونیشیا کا دورہ
بدھ, 2 مئی, 2018
ازہر شريف كا اعلى درجہ كا ايک وفد فضيلت مآب امامِ اكبر شيخ ازہر كى سربراہى  ميں انڈونيشيا كے دار الحكومت جاكرتا كى ‏طرف متوجہ ہوا. مصر کے وفد میں انڈونیشیا میں مصر کے سفیر جناب عمرو معوض صاحب اور  جامعہ ازہر شريف كے سربراه...
شیخ الازہر کا پرتگال اور موریتانیہ کی طرف دورہ
بدھ, 14 مارچ, 2018
فضیلت مآب امامِ اکبر شیخ الازہر پروفیسر ڈاکٹر احمد الطیب ۱۴ مارچ کو پرتگال اور موریتانیہ کی طرف روانہ ہوئے، جہاں وہ دیگر سرگرمیوں میں شرکت کریں گے، اس کے ساتھ ساتھ ملک کے صدر، وزیراعظم، وزیر خارجہ اور صدرِ پارلیمنٹ سے ملاقات کریں گے۔ ملک کے...
123457910Last

سلسلہء حقوق .. والدين كے حقوق
            حقوق كے سلسلے ميں الله نے نہ صرف اپنےحقوق ادا كرنےكى تاكيد كى  ہے ، بلكہ حقوق...
پير, 26 اگست, 2019
عہد كى پابندى
جمعرات, 25 جولائی, 2019
خدمتِ خلق
منگل, 23 جولائی, 2019
عدل واحسان
پير, 22 جولائی, 2019
حُسنٍ خُلق
جمعرات, 11 جولائی, 2019
123468910Last

دہشت گردى كے خاتمے ميں ذرائع ابلاغ كا كردار‏
                   دہشت گردى اس زيادتى  كا  نام  ہے جو  افراد يا ...
جمعه, 22 فروری, 2019
اسلام ميں مساوات
جمعرات, 21 فروری, 2019
دہشت گردى ايك الميہ
پير, 11 فروری, 2019
1234567810Last